اردو املا قسط چہارم

Afzal339

Thread Starter
⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Charismatic
Expert
Writer
Popular
Scientist
Helping Hands
Joined
Apr 25, 2018
Local time
8:04 AM
Threads
207
Messages
594
Reaction score
964
Points
460
Gold Coins
425.31
تمام آئی ٹی درسگاہ ممبران کو محمد افضل کا سلام
دوستو آج حاضر ہوں پانچویں قسط کے ساتھ
تلفظ الفاظ کی آواز کی صحیح ادائیگی تلفظ کہلاتی ہے۔ تلفظ کے لیے اعراب یعنی حرکات و سکنات کا جاننا ضروری ہے۔
علاماتِ تلفظ اعراب یا حرکات و سکنات
تلفظ کی درستی کے لیے اردو میں حروف پر مخصوص علامات استعمال کی جاتی ہیں، ان علامتوں کو اعراب کہا جاتا ہے۔ اعراب لگانے سے حرف دو حالتوں میں آ جاتا ہے۔نمبر ایک متحرک حالت اور نمبر دو ساکن حالت
متحرک جب حرف پر زَبر، زِیر یا پیش آئے تو یہ حرف اپنی آواز دیتا ہے، اور ایسے حرف کو متحرک کہاجاتا ہے۔
ساکن جب حرف پر کوئی حرکت زیر، زبر،پیش) نہ ہو بلکہ جزم /سکون ہو تو ایسا حرف ساکن کہلاتا ہے۔
اعراب یہ ہیں؛
زَبر یہ علامت حرف کے اوپر لگائی جاتی ہے۔ عربی میں زَبر کو فَتح کہتے ہیں اس لیے جس حرف پر زبر آئے اسے مفتوح کہتے ہیں۔ جیسے بَ تَ ثَ
زِیر یہ علامت حرف کے نیچے لگائی جاتی ہے۔ عربی میں زِیر کو کسرہ کہتے ہیں اس لیے جس لفظ کے نیچے آئے اسے مکسور کہتے ہیں۔ جیسے بِ تِ ثِ
پیش یہ علامت حرف کے اوپر لگائی جاتی ہے،عربی میں پیش کو ضمہ کہتے ہیں اس لیے جس حرف پر آئے اسے مضموم کہتے ہیں۔جیسے بُ تُ ثُ
کھڑی زَبر یہ علامت حرف کے اوپر لگتی ہے یہ الف اور زبر کا کام دیتی ہے۔ جیسے ب کھڑی زبر بٰ یعنی ب الف زبر با
کھڑی زیر یہ علامت حرف کے نیچے لگتی ہے اور یاء اور زیر کا کام دیتی ہے۔ جیسے ب کھڑی زیر بٖ یعنی ب یاء زیر بی
الٹا پیش یہ علامت حرف کے اوپر لگتی ہے یہ واؤ اور پیش کا کام دیتی ہے جیسے ب الٹا پیش بٗ یعنی ب واؤ پیش بو
جزم / سکون یہ علامت حرف کے سکون یا ٹھہراؤ کو ظاہر کرتی ہے، حرف کے اوپر لگائی جاتی ہے۔اس علامت والا حرف ساکن ہوتا ہے۔ جیسے اَب
تنوین دو دو زبر، دوزیر اور دو پیش تنوین کہلاتے ہیں اس علامت کا مطلب یہ ہے کہ اگر دو زبر ہو تو نون ساکن ماقبل مفتوح،دو زیر ہو تو نون ساکن ماقبل مکسور اور دو پیش ہو تو نون ساکن ماقبل مضموم ہے
تشدید یہ علامت حرف کے اوپر لگتی ہے اس علامت کا مطلب یہ ہے کہ یہ جس حرف پر ہو تو اس کا اول متحرک اور دوم ساکن ہوگا جیسے ابّو جو کہ اصل میں اَب’بُو’تھا پہلی باء کو حذف کیا اور اس کی موجودگی کو برقرار رکھنے کے لیے دوسری باء پر تشدید لگائی۔اب لکھی تو ایک جاتی ہے لیکن پڑھی دو جاتی ہیں اس لیے اس علامت کو شد بھی کہتے ہیں، اس علامت والے حرف کو مشدّد کہتے ہیں۔
وقف دوران تکلم کسی جگہ رکنا وقف کہلاتا ہے
موقوف حرف دوران کلام جس لفظ کے آخری حرف پر وقف کیا جائے اسے موقوف حرف کہتے ہیں
اشباع کسی حرف کی حرکت کو اس طرح پڑھنا کہ زبر سے الف، زیر سے ے اور پیش سے واؤ کی آواز پیدا ہو جائے۔جیسے رَستہ سے راستہ
اِمالہ کسی لفظ کے الف یاہ کو یائے مجہول (ے) سے بدل کر پڑھنا امالہ کہلاتا ہے۔جیسے کاکا سے کاکے
ادغام دو ہم مخرج حرفوں کو ملا کر پڑھنا ادغام کہلاتا ہے۔ جیسے بدتر کو بتّر
محذوف کسی لفظ میں اگر کوئی حرف حذف کر دیا جائے تو اس حذف شدہ حرف کو محذوف کہتے ہیں۔ جیسے شاباش میں دال محذوف ہے جو کہ اصل میں ”شادباش“ تھا
جاری ہے۔۔۔۔
 

Doctor

⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
King of Alkamunia
ITD Supporter 🏆
Proud Pakistani
الکمونیا میں تو ایسا نہیں ہوتا
ITD Developer
Top Poster
Joined
Apr 25, 2018
Local time
1:04 PM
Threads
851
Messages
12,444
Reaction score
14,336
Points
1,801
Age
47
Location
Rawalpindi
Gold Coins
3,448.33
Get Unlimited Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Change Username Style.
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks