ابوالاثر حفیظ جالندھری مرحوم کی شاہنامہ اسلام جلد اول سے منتخب اشعار

PakArt UrduLover

Thread Starter
Staff member
★★★★★★
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
Verified
ITD Observer
ITD Intrinsic Person
ITD Well Wishir
ITD Fan Fictionest
ITD Solo Person
ITD Supporter
Persistent Person
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Messages
7,363
Reaction score
6,515
Points
3,239
Location
Manchester U.K
Gold Coins
534.26
Silver Coins
20,145
Diamonds
1.08070
Get Unlimited Tags / Banners
Promotion from VIP to ITD Star.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited
Permanently Change Username Color & Style.
سخن کی قدر دانی زندگانی میں نہیں جاتی
یہاں جب شمع بجھ لیتی ہے تب پروانہ آتا ہے

سب سے پہلا شعر جو ابتدائی اشعار میں مجھے پسند ہے وہ ہے جس میں ابوالاثر حفیظ جالندھری مرحوم نے وجہ تالیف بتاتے ہوئے اپنی آرزو کو ان سادہ مگر موثر لفظوں میں بیان کیا ہے

تمنا ہے کہ اس دنیا میں کوئی کام کر جاؤں
اگر کچھ ہو سکے تو خدمت اسلام کر جاؤں

ابوالاثر حفیظ جالندھری مرحوم نے فردوسی کے شاہنامے اور کام کا ذکر بہت اچھے طریق سے کیا ہے جس میں واجبی انکسار کے علاوہ صورت واقعہ اور دلی درد کا اظہار ہے :۔
کیا فردوسی موحوم نے ایران کو زندہ
خدا توفیق دے تو میں کروں ایمان کو زندہ

تقابل کا کروں دعویٰ یہ طاقت ہی کہاں میری
تخیل میرا ناقص نامکمل ہے زباں میری

زباں پہلوی کی ہمزبانی ہو نہیں سکتی
ابھی اردو میں پیدا وہ روانی ہو نہیں سکتی

کہاں ہے اب وہ دور غزنوی کی فارغ البالی
غلامی نے دبا رکھی ہے میری ہمت عالی

****
غلامی نے دبا رکھی ہے میری ہمت عالی
آخری مصرعے میں جو درد ہے اس سے آج کل کے اکثر نوجوان آگاہ ہیں اور فی الحقیقت ہمیتیں اس زمانے میں بہت پست ہو وہی ہیں مگر جس بلند ہمتی کا ثبوت ابوالاثر حفیظ جالندھری مرحوم نے دیا ہے وہ قابل تعریف ہے کہ ناداری کے سنگ گراں کے باوجود ایسے اہم کام کا بیڑا اٹھایا ہے جس سے بڑے بڑے سرمایا دار گھبرائیں ۔
جب حضرت ابراہیم علیہ سلام اپنی بیوی کو ہمراہ لے کر عرب کی طرف آئے تو اس مختصر سے قافلہ کا صحرائے عرب میں سفر ذیل کے تین شعروں میں بہت پاکیزہ لفظوں میں بیان ہوا ہے :۔

خدا کا قافلہ جو مشتمل تھا تین جانوں پر
معزز جس کو ہونا تھا زمینوں آسمانوں پر

چلا جاتا تھا اس تپتے ہوئے صحرا کے سینے پر
جہاں دیتا ہے انساں موت کو ترجیح جینے پر

وہ صحرا جس کا سینہ آتشیں کرنوں کی بستی ہے
وہ مٹی جو سدا پانی کی صورت کو ترستی ہے
آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے دنیا میں تشریف لانے کا متعلق جو اشعار لکھے ہیں انہیں پڑھ کر عاشقان نبوی صلی اللہ علیہ وسلم پر حالت وجد طاری ہو گی

یہ کس کی جستجو میں مہر عالمتاب پھرتا ہے
ازل کے روز سے بیتاب تھا بیخواب پھرتا ہے

کروڑوں رنگتیں کس کے لئے ایام نے بدلیں
پیپے کروٹیں کس دھن میں صبح و شام نے بدلیں

یہ سب کچھ ہو رہا تھا ایک ہی امید کی خاطر
یہ ساری کاہشیں تھیں ایک صبح عید کی خاطر
 

Doctor

★★★★★★
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
Verified
King of Alkamunia
الکمونیا میں تو ایسا نہیں ہوتا
Top Poster
ITD Developer
Joined
Apr 25, 2018
Messages
9,594
Reaction score
11,747
Points
3,686
Age
46
Location
Rawalpindi
Gold Coins
88.07
Silver Coins
10,721
Diamonds
0.12980
Get an Animated Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Change Username Style.

PakArt UrduLover

Thread Starter
Staff member
★★★★★★
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
Verified
ITD Observer
ITD Intrinsic Person
ITD Well Wishir
ITD Fan Fictionest
ITD Solo Person
ITD Supporter
Persistent Person
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Messages
7,363
Reaction score
6,515
Points
3,239
Location
Manchester U.K
Gold Coins
534.26
Silver Coins
20,145
Diamonds
1.08070
Get Unlimited Tags / Banners
Promotion from VIP to ITD Star.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited
Permanently Change Username Color & Style.
ان شعروں میں تو آپ کی آمد کی امید کا ذکر تھا اب ذرا آمد کی شان ملاحظہ ہو

معین وقت آیا زور باطل گھٹ گیا آخر
اندھیرا مٹ گیا ظلمت کا بادل چھٹ گیا آخر

مبارک ہو کہ دور راحت و آرام آ پہنچا
نجات دائمی کی شکل میں اسلام آ پہنچا

مبارک ہو کہ ختم المرسلیں تشریف لے آئے
جناب رحمتہ للعٰلمین تشریف لے آئے

خبر جا کر سنا دو شش جہت کے زیردستوں کو
زبردستی کی جرات اب نہ ہو گی خودپرستوں کو

ضعیفوں بیکسوں آفت نصیبوں کو مبارک ہو
یتیموں کو غلاموں کو غریبوںکو مبارک ہو

کس عجیب پیرائے میں ان خصائل کا ذکر کیا گیا ہے جو آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے اخلاق کا جزو تھیں
جس شب آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم ہجرت کے ارادے سے مکہ شریف سے کفار کے نرغے کے باوجود نکلتے ہیں دیکھیے اس کا بیان کس انداز سے ہوا ہے

نظر آتی تھیں چاروں سمت تلواریں ہی تلواریں
اندھیرے میں چمک اٹھتی تھیں بجلی کی طرح دھاریں

وہ دراتا ہوا وحدت کا دم بھرتا ہوا نکلا
تلاوت سورۃ یٰسین کی کرتا ہوا نکلا

کھنچی ہی رہ گئیں خونریز خوں آشام شمشیریں
کسی نے کھینچ دی ہوں جس طرح کاغذ کی تصویریں*

 

PakArt UrduLover

Thread Starter
Staff member
★★★★★★
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
Verified
ITD Observer
ITD Intrinsic Person
ITD Well Wishir
ITD Fan Fictionest
ITD Solo Person
ITD Supporter
Persistent Person
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Messages
7,363
Reaction score
6,515
Points
3,239
Location
Manchester U.K
Gold Coins
534.26
Silver Coins
20,145
Diamonds
1.08070
Get Unlimited Tags / Banners
Promotion from VIP to ITD Star.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited
Permanently Change Username Color & Style.
مدینے پہنچنے پر جو زندگی مسلمانوں نے اپنے ہادی برحق کے زیر سایہ شروع کی اس کا نقشہ ذیل کے اشعار میں ملاحظہ ہو :۔

تھے انصار و مہاجر اک نمونہ شان وحدت کا
کہ اس تسبیح میں تھا رشتہ محکم اخوت کا

مسلماں تھے کہ تھیں زید ورع کی زندہ تصویریں
نمازیں اور تسبیحیں اذانیں اور تکبیریں

تجارت یا زراعت یا دعائیں یا مناجاتیں
مشقت کے لئے دن تھے عبادت کے لئے راتیں
جہاد پر جو حکم ہمارے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے دیا اسے واضع کیا گیا ہے ۔ اس سے بہتر اصول واضع کرنا ناممکن ہے افسوس کہ دنیا اس کے حکم متعلق گوناں گوں غلطیوں میں مبتلا ہے ۔

کہا راہ خدا میں تم کو لڑنے کی اجازت ہے
خدا کے دشمنوں کے دفع کرنے کی اجازت ہے

مگر تم یاد رکھو صاف ہے یہ حکم قرآں کا
ستانا بے گناہوں کو نہیں شیوا مسلماں کا

نہیں دیتا اجازت پیش دستی کی خدا ہرگز
مسلماں ہو تو لڑنے میں نہ کرنا ابتدا ہر گز

فقط ان سے لڑو جو لوگ تم سے جنگ کرتے ہیں
فقط ان سے لڑو جو تم پہ جینا تنگ کرتے ہیں


 
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock
No Thanks