جمادی الاول کے بابت کچھ شیئرنگ

PakArt UrduLover

Thread Starter
in memoriam 1961-2020، May his soul rest in peace
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
ITD Observer
ITD Solo Person
ITD Fan Fictionest
ITD Well Wishir
ITD Intrinsic Person
Persistent Person
ITD Supporter
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Local time
3:16 AM
Threads
1,354
Messages
7,660
Reaction score
6,959
Points
1,508
Location
Manchester U.K
Gold Coins
112.02
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited
جمادی الاول اسلامی کیلنڈر کا پانچواں مہینہ ہے جس کے چند اہم ایّام کی تفصیل درج ذیل ہے
View attachment 3819
مراد خان ثالث کی وفات:
8 جمادی الاول 1003 ہجری بمطابق 19 جنوری 1595 سلطان مراد خان ثالث مملکت عثمانیہ کے 13 ویں سلطان اور چوتھے خلیفہ 21 سال حکومت کرنے کے بعد 50 سال کی عمر میں وفات پا گئے۔
امام محمد عبدہ کی وفات:
8 جمادی الاول 1323 ہجری بمطابق 11 جولائی 1905 استاذ محمد عبدہ مصر میں الاصلاح تحریک کے رہنماء کی وفات ہو گئی یہ البحیرۃ ضلع کی ایک بستی میں پیدا ہوئے الجامع احمدی اور پھر الازہر سے تعلیم حاصل کی ، جمال الدین افغانی کے ساتھی رہے اور ان کی شاگردی بھی اختیار کی ،انگریز کے خلاف عرب تحریک میں حصہ لیا اور مصر سے بیروت جلاوطن کر دئیے گئے ، واپسی کے بعد انھیں مصر کا مفتی تعینات کر دیا گیا اور مصر میں الاصلاح تحریک کی قیادت کی ۔

پہلی اسرائیلی حکومت کی تشکیل:
8 جمادی الاول 1368 ہجری بمطابق 8 مارچ 1949 ڈیوڈ بن گوریان کی سربراہی میں 1948 میں اسرائیل کے قیام کے اعلان کے بعد پہلی اسرائیلی حکومت کا قیام عمل میں آیا، بن گوریان صہیونی 1886 کو پولینڈ میں پیدا ہوا ، یہ اسرائیل کی لیبر پارٹی کے رہنماؤں اور مؤسسین میں سے ایک تھا اور اسی نے اسرائیل کے قیام کا اعلان کیا ، 1973 میں اس کی وفات ہوئی اس نے یہودی وطن کے حصول اور عبرانی مملکت کے حوالے سے دسیوں کتب اور تاریخی مباحث تحریر کئے۔

محدث احمد البنا کی وفات:
8 جمادی الاول 1378 ہجری بمطابق 19 نومبر 1958 مصر میں 14 ویں صدی ہجری (20 ویں صدی ) کے عظیم محدث احمد عبدالرحمٰن البنا کی وفات ہوئی یہ حسن البناء شہید کے والد تھے ان کی کتاب بہت مشہور ہے۔

حمزہ فتح اللہ لغوی کی وفات:
8 جمادی الاول 1336 ہجری بمطابق19 فروری 1918 لغت کے بڑے امام الشیخ حمزۃ فتح اللہ کی وفات ہوئی یہ 1266 ہجری بمطابق 1849 مصر کے ضلع البحیرۃ کے علاقے ادکو میں پیدا ہوئے قرآن حفظ کیا اور الازہر میں تعلیم حاصل کی اس کے بعد صحافت کے میدان کا رخ کیا اور البرہان رسالہ اور پھر الاعتدال کا اجراء کیا پہلے لینگوئج کالج اور پھر دارلعلوم میں مدرس رہے ان کی مشہور کتابیں المواهب الفتحية في علوم اللغة العربية اور ورسالة في المفردات الأعجمية ہیں۔


 

Doctor

⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
King of Alkamunia
ITD Supporter 🏆
Proud Pakistani
الکمونیا میں تو ایسا نہیں ہوتا
ITD Developer
Top Poster
Top Poster Of Month
Joined
Apr 25, 2018
Local time
7:16 AM
Threads
842
Messages
12,115
Reaction score
14,133
Points
1,801
Age
47
Location
Rawalpindi
Gold Coins
3,352.31
Get Unlimited Tags / Banners
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Change Username Style.

PakArt UrduLover

Thread Starter
in memoriam 1961-2020، May his soul rest in peace
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
ITD Observer
ITD Solo Person
ITD Fan Fictionest
ITD Well Wishir
ITD Intrinsic Person
Persistent Person
ITD Supporter
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Local time
3:16 AM
Threads
1,354
Messages
7,660
Reaction score
6,959
Points
1,508
Location
Manchester U.K
Gold Coins
112.02
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited
جمادی الاولیٰ میں ہونیوالے واقعات وحوادث
٭:جمادی الاولیٰ 2ہجری میں غزوہ ذی العشیرہ ہوا۔(ابن ہشام،طبقات ابن سعد،فتح الباری)
٭:جمادی الاولیٰ 3ہجری میں غزوہ بنی سلیم،بحران ہوا۔ (المغازی، طبقات ابن سعد)
٭:جمادی الاولیٰ 4ہجری میں نواسہ رسولؐ حضرت عبداللہ بن عثمان ؓ کی وفات ہوئی۔ (البدایہ، الکامل)
٭:جمادی الاولیٰ 6ہجری سریہ حضرت زیدبن حارثہ ازطرف عیص ہوا (المغازی، طبقات ابن سعد)
٭:حضرت جعفربن ابی طالبؓ قدیم الاسلام ،جلیل القدرصحابی اورمجاہدتھے ۔ پہلے حبشہ اورپھرمدینہ منورہ کی طرف ہجرت فرمائی ۔جنگ موتہ میں جمادی الاولیٰ 8ہجری میں شہادت ہوئی ۔ (سیرت سیدالانبیاء، صفحہ 433، طبقات ابن سعد،ابن ہشام)
٭:جمادی الاولیٰ 9 ہجری میں سرکارِدوعالم ؐکے بیٹے حضرت ابراہیم ؓ کی ولادت ہوئی ۔
٭:جمادی الاولیٰ 14 ہجری میں مشہوراسلامی شہر حمص، بعلبک، انطاکیہ فتح ہوئے۔
٭:جمادی الاولیٰ 17ہجری میں ایران کا صوبہ اہوازفتح ہوا۔
٭:جمادی الاولیٰ19ہجری میں عراق کا مشہور شہر تکریت فتح یابی کے بعداسلامی مملکت کاحصہ بنا۔
٭:جمادی الاولیٰ 20ہجری میں حضرت سعیدبن عامرؓ کی وفات ہوئی ۔ (الاصابہ)
٭: جمادی الاولیٰ 35 ہجری میں صحابی حضرت عبادہ بن صامتؓ کی وفات ہوئی۔
٭:جمادی الاولیٰ36ہجری میںصحابی حضرت حذیفہ بن یمانؓ کا انتقال ہوا۔
٭:جمادی الاولیٰ 44ہجری میں ام المومنین حضرت ام حبیبہؓکاانتقال ہوا۔
٭:جمادی الاولیٰ 72ہجری میںحضرت مصعب بن زبیرؓ کی شہادت ہوئی ۔(طبقات ابن سعد،تاریخ الاسلام)
٭:17جمادی الاولیٰ73ہجری میں حضرت عبداللہ بن زبیرؓنے جام شہادت نوش فرمایا ۔ دوسرا قول جمادی الاخریٰ ہے۔ (طبقات ابن سعد ، تاریخ خلیفہ)ایک قول کے مطابق اس کے 10 روز بعد یعنی 27جمادی الاولیٰ کوحضرت اسماءؓ بھی اس دارِفانی سے انتقال کرگئیں ۔ (الااستعیاب )
٭:19جمادی الاولیٰ 911ہجری کو تفسیر درِمنثور کے مصنف عالم اکبر،محدث کبیر ، صوفی امام جلال الدین عبدالرحمن سیوطی شافعیؒ کامصرکے شہرقاہرہ میں انتقال ہوا۔ آپؒ نے 600 سے زائدکتب تصنیف فرمائیں جن میں تفسیر در منثور، البدورالسافرہ اور شرح الصدوروغیرہ مشہور ہیں۔ آج بھی آپؒ کا مزار مرجع خلائق ہے ۔ (النورالسافر)
جمادی الاولیٰ میں کی جانے والی آسان نیکی
اس ماہ مبارک میں بھی عبادت کی خاص فضیلت بیان کی گئی ہے جس کے صلے میں نیکیوں کا شمار کرنا ناممکن ہے ۔ حضرت شیخ محی الدین ابن عربیؒ اس ماہ مبارک میں کی جانیوالی عبادت اور اس کے صلے میں ملنے والی نیکیوں کو یوں بیان کرتے ہیں کہ مجھے یہ حدیث پاک پہنچی تھی ۔’’مَنْ قَالَ لَااِلٰہَ اِلَّااللّٰہُ سَبْعِیْنَ اَلْفًاغُفِرَلَہ‘وَمَنْ قِیْلَ لَہ‘غُفِرَلَہ‘اَیْضًایعنی جوشخص 70ہزاربارلَااِلٰہَ اِلَّااللّٰہُ پڑھے اس کی مغفرت کردی جاتی ہے ۔ اورجس کیلئے پڑھاجائے اس کی بھی مغفرت ہو جاتی ہے ‘‘۔میں نے اتنی مقدارمیں کلمہ طیبہ پڑھا ہوا تھا لیکن اس میں کسی کیلئے خاص نیت نہ کی تھی ۔ ایک مرتبہ میں اپنے دوستوں کے ساتھ ایک دعوت میں شریک ہوا۔اس دعوت کے شرکاء میں سے ایک نوجوان کے کشف کابڑاشُہرہ تھا کھانا کھاتے کھاتے وہ نوجوان رونے لگا۔میں نے سبب پوچھا تواس نے کہامیں اپنی والدہ کوعذاب میں مبتلا دیکھتا ہوں ۔ میں نے دل ہی دل میں کلمے کا ثواب اس کی ماں کوبخش دیا۔وہ نوجوان فوراًہی مسکرانے لگا اور کہنے لگا۔اب میں اپنی ماں کوبہترین جگہ دیکھتا ہوں ۔ حضرت شیخ محی الدین ابن عربیؒ بیان کیا کرتے تھے ۔’’میں نے حدیث کی صحت کو اس نوجوان کے کشف کے ذریعے اوراس نوجوان کے کشف کی صحت کوحدیث کے ذریعے پہچانا ‘‘ ۔ (مراۃ المفاتیح ، جلد3)
اللہ تعالیٰ ہمیں اعمال صالح کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔آمین

 
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks