ہیٹ سٹروک

Afzal339

Thread Starter
⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Charismatic
Expert
Writer
Popular
Scientist
Helping Hands
Joined
Apr 25, 2018
Local time
3:40 PM
Threads
206
Messages
593
Reaction score
955
Points
460
Gold Coins
420.36
تمام آئی ٹی درسگاہ ممبران کو محمد افضل کا سلام
دوستو آج ہم ہیٹ سٹروک پر بات کریں گے
لُولگنا ہیٹ سٹروک Heat Stroke)
موسم گرما کے شروع ہوتے ہی گرمی سے انسان سمیت ہر جاندار متاثر ہونے لگتا ہے، درجہ حرارت بڑھنے سے پسینہ تیزی سے خارج اور نمکیات ضائع ہونے لگتے ہیں جس کی وجہ سے گرمی میں
لو یعنی "ہیٹ سٹروک" لگنے کے خدشات بھی بڑھ جاتے ہیں
"ہیٹ سٹروک"، "سن سٹروک " یا " لُو" لگنا شدید گرمی سے ہونی والی بیماری ہے جسے میڈیکل کی زبان میں
" Hyperthemia "
کہاجاتا ہے۔انسانی جسم کا درجہ حرارت بیرونی گرمی اور دھوپ کی وجہ سے بہت بڑھ جاتاہے۔ جسم کے درجہ حرارت میں یہ اضافہ بخار سے بالکل مختلف ہوتا ہے۔ جو مہلک ثابت ہوسکتا ہے
گذشتہ چند سالوں میں پورے ملک بالخصوص کراچی میں ہیٹ سٹروک سے ہزاروں ہلاکتیں ہوئیں۔ شہرِ قائد میں گرمی کی شدت، پانی کے مسائل اور لوڈشیڈنگ کے باعث اموات کی شرح میں مزید اضافہ ہوا۔
۔۔ ایک ہی دن میں سینکڑوں ہلاکتیں دیکھی گئیں اس سال بھی "ہیٹ سٹروک " کا خطرہ، لوڈ شیڈنگ اور پانی کے مسائل موجود ہیں اور ماہرینِ موسمیات کی پیشن گوئی کے مطابق اس سال موسمِ گرما گذشتہ سال سے بھی سخت رہے گا۔
اگرچہ "ہیٹ سٹروک " کا خطرہ پورے ملک میں موجود ہے لیکن گزشتہ کچھ سالوں کو دیکھتے ہوئے یہی اندازہ ہوتا ہے کہ سب سے زیادہ خطرہ کراچی میں ہوسکتا ہے۔ اسی لیے محکمہ موسمیات نے کراچی والوں کو "ہیٹ سٹروک " اور شدید گرمی سے ہوشیار کردیا لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ عوام "ہیٹ سٹروک " سے بچنے کے لئے آگاہی حاصل کریں اور تمام تر ممکنہ حفاظتی اقدامات کریں
طبی ماہرین نے لو لگنے کی یہ علامات بتائی ہیں
سر درد
چکر آنا اور چکرانا
کمزوری اور نقاہت
رنگت سرخ ہوجانا
جلد اور منہ خشک ہو جانا
اچانک بخار ہوجانا
جسم کا درجہ حرارت غیرمعمولی حد تک بڑھ جانا
پٹھوں میں درد، کمزوری اوراعصاب میں تناؤ کا احساس ہونا
متلی اور قے کا آنا
تیز دھڑکن
بلڈ پریشر ایک دم گر جانا
مریض کا بے ہوش ہوجانا
بار بار پیشاب کا آتا
سانس میں تنگی ہونے کے باعث خراٹے جیسی آواز آنا
جسم میں پانی کی کمی کی وجہ سے چھوٹی آنت میں خراش پیدا ہونا
معدے میں تیزابیت پیدا ہوناوغیرہ وغیرہ
لو سے بچنے کے لیے ضروری اقدامات اور احتیاطی تدابیر
گرم موسم میں پانی کا زیادہ سے زیادہ استعمال کرنا چاہئے
روزانہ کم از کم تین لیٹر پانی تو ضرور پینا چاہئے
پانی کے ساتھ جوسز وغیرہ کا بھی زیادہ سے زیادہ استعمال کریں۔
نمکیات کی کمی کو پورا کرنے کے لئے "او آر ایس"کا استعمال کریں۔
پیشاب کی گہری رنگت پانی کی کمی کی نشانی ہے۔ اس لئے پیشاب کی ہلکی رنگت برقرار رکھنے کے لئے زیادہ سے زیادہ مائعات یعنی پانی اور جوسز کا استعمال زیادہ کریں۔
جسم میں پانی کی کمی نہ ہونے دیں اور اگر موسم گرم ہو تو بھر پور جسمانی سرگرمیوں سے اجتناب کریں
گوند کتیرا، تخم ملنگا اور اسپغول کی بھوسی کا پانی میں بھگو کراستعمال بھی مفید رہتا ہے
ستو کے شربت کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں
کچی اور پکی لسی کا استعمال بھی لو سے بچانے میں مفید رہاہے
تربوز گرمی کا بہترین توڑ ہے
کالی مرچ کا سفوف، کھیرا، فالسہ اور آلو بخارہ بھی: لو: ہیٹ سٹروک میں انتہائی مفید ہے
شربت عناب،خشک آلوبخارے کا شربت،سرکہ یا املی کا شربت بھی ہیٹ سٹروک سے مفید ہے
گرمی کے موسم میں کھانا کھانے کے بعد گڑ کھانے سے لو نہیں لگتی
تلی ہوئی، باسی اور نشاستہ والی غذائیں سے حتٰی الامکان اجتناب کیا جائے۔
چائے،کافی، عام قسم کی مشروبات اور گرم اشیاء کا استعمال کم سے کم کیجئے
روزانہ ایک یا دومرتبہ نہانا چاہئے
گرمی میں گہرے رنگ کے کپڑوں کا استعمال نہ کریں
ہلکے رنگ کا اور ڈھیلا ڈھالا لباس زیب تن کریں۔
ٹھنڈی اور سائے دار جگہوں پر رہیں
اول تو دھوپ میں نکلنے سے بچیں اگر نکلنا پڑجائے تو سر ڈھانپ کر نکلیں اور پانی ساتھ رکھیں
دھوپ میں آنے کے بعد تھوڑا سا پیاز کا رس شہد میں ملا کر چاٹنے سے لو لگنے کا خطرہ کم ہو جاتا ہے
شدید گرمی، حبس اور دھوپ ہی ہیٹ سٹروک کی وجہ ہیں ان سے خود کو بچائیں
چھوٹے بچوں کو کار میں چھوڑ کر مت جائیں،کیونکہ بند کار میں درجہ حرارت بڑھ جانے سے ہیٹ سٹروک کا خطرہ بڑھ سکتا ہے
ابتدائی طبی امداد اورعلاج
اگر آپ کو شبہ ہو کہ مریض کو "ہیٹ سٹروک " ہے تو سب سے پہلے ایمبولینس کوطلب کریں یا متاثرہ شخص کو خود ہسپتال لے جائیں کیوں کہ طبی امداد میں تاخیر جان لیوا ثابت ہوسکتی ہے۔
ایمبولینس کے انتظار کے دوران مریض کو کسی سایہ دار اور ٹھنڈی جگہ پر منتقل کردیں
فرش ہونے کی صورت میں مریض کو فرش پر لٹا دیں اور اس کے پاؤں کسی اونچی چیز پر رکھ دیں تاکہ دل کی جانب خون کا بہاؤ بڑھ جائے اور شاک کی روک تھام ہوسکے۔
مریض کے کپڑے ٹائٹ ہو تو ان کو ڈھیلا کردیں اور مریض کے غیر ضروری کپڑے ہٹا دیں۔
مریض کو ہو ا والی جگہ میں رکھیں۔
تولیے کو ٹھنڈے پانی میں بھگوکر جسم پر لگائیں یا ٹھنڈے پانی کا سپرے کریں۔
اگر پیڈسٹل پنکھا ہو تو پنکھے کا رخ مریض کی جانب کردیں بجلی نہ ہو نے کی صورت میں ہاتھ والے پنکھے یا کسی بھی چیز سے خود مریض کو ہوا دیں او مریض کے گردن، بغل، کمر اور ران پر برف سے ٹکور کریں۔۔۔​
 
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks