لفظ افغان کی تحقیق قسط دوم

Afzal339

Thread Starter
⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Charismatic
Expert
Writer
Popular
Scientist
Helping Hands
Joined
Apr 25, 2018
Local time
8:09 AM
Threads
207
Messages
594
Reaction score
963
Points
460
Gold Coins
424.90
لفظ افغان کی تحقیق قسط اول
خلاصہ کلام
یہ لفظ "افغان "اصل میں کیا تھا اور کیا نہیں اس حوالے سے میں نے اکثراقوال ذکرکردیے۔ مزید یہ کہ میں اپنی رائے بھی ذکر کرناچاہوں گا۔
میرے خیال سے اس قوم کا نام بحیثیت قوم "افغان" ہی ہے اورلفظ " پختون" اصل میں ان کی زبان کا نام "پختو" سے ہے اور یہ نام اس قوم کا" افغان" نام کے ساتھ زیادہ مستعمل ہونے کی وجہ سے یا پھر زبان کا نام ہونے کی وجہ سے ان کی قوم کے لیے بھی مستعمل ہونے لگا۔
نوٹ :میں افغان اور اغوان میں دونوں طبقوں کی رعایت کا قائل ہوں یعنی جن کے لیے حرف"ف" ثقیل ہے تو ان کےلہجے کی رعایت کرتے ہوئے اوغان سمجھا جائے اور اور جو حرف"ف" کی ادائے گی پر قادر ہے ان کے لہجے کرتے ہوئے افغان سمجھا جائے ۔
لفظ "افغان " قوم کا نام ہے اور لفظ "پختو"(پشتو)زبان کا نام ہے میرے اس دعوے پر میرے پاس کچھ دلائل بھی ہیں
اولا:عربی لغت "قاموس اعلام" کے مصنف شمس الدین سامی کہتے ہیں "افغان" ایک قدیم قوم ہے جو "پشتو" زبان بولتی ہے۔یہاں پر قوم کو افغان اور زبان کے لیے "پشتو" کا نام استعمال کرنا ثابت کرتا ہے اس قوم کا نام "افغان" ہی ہے
ثانیا: جب چوہدری رحمت علی مرحوم نے ملک عزیز کے لیے نام "پاکستان" تجویز کیا تھا تو اپنے ایک کتابچے "ناؤ آر نیور" میں اس نام کی تشریح کرتے ہوئے انھوں نے فرمایا تھا کہ
حرف"پ" سے پنجاب حرف " الف" سے افغان حرف " ک" سے کشمیر حرف "س سے سندھ اور لفظ "تان " سے بلوچستان
ملاحظہ کیجیے کہ یہاں پر پختون قوم کے لیے باوجود حرف "پ" کے( موجود ہونے کے اور اس سے پنجابی اور پختون دونوں بھی مراد لیے جاسکتے تھے)"افغان" کا نام استعمال کرنا اس بات کی دلیل ہے کہ ان کی نظر میں بھی پختون بحثیت قوم "افغان" ہے
ثالثا: مؤرخین کے بابا ہیرو ڈوڈٹس جزوی تحریف کے ساتھ پختونوں کا قومی نام "افغان" بتاتے ہیں۔
رابعا: علامہ اقبال رحمۃ اللہ علیہ اپنے اشعار میں بھی اس قوم کو "افغان" نام سے مخاطب کرتے ہیں ملاحظہ کیجیے
قبائل ہوں ملّت کی وحدت میں گُم
کہ ہو نام۔۔۔۔۔۔۔ افغانیوں کا بلند
محبّت مجھے۔۔۔ اُن جوانوں سے ہے
ستاروں پہ۔۔۔۔۔۔ جو ڈالتے ہیں کمند

اسی طرح ایک اور جگہ فرماتے ہیں
رومی بدلے، شامی بدلے، بدلا ہندُستان
تُو بھی اے فرزندِ کُہستاں!
اپنی خودی پہچان اپنی خودی پہچان او غافل افغان
ایک اور مقام پر فرماتے ہیں
بُتانِ رنگ و خُوں کو توڑ کر مِلّت میں گُم ہو جا
نہ تُورانی رہے باقی، نہ ایرانی نہ افغانی

اسی طرح ایک اور جگہ فرماتے ہیں
افغان باقی کہسار باقی
الحکم للہ الملک للہ

الغرض آپ رحمۃ اللہ علیہ نے ہر جگہ اس قوم کو افغان"نام" سے پکارا ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ اس قوم کا نام افغان ہے ۔
اسی طرح خوشحال خان خٹک کے بارے میں فرماتے ہیں
خوش سرود آں شاعر افغان شناس
ہر چہ بنید باز گوید ۔۔۔بے ہراس
آں حکیم ملتِ افغانیاں
آں طبیب ِملت ِافغانیاں

ملاحظہ کیجیے کہ علامہ اقبال رحمۃ اللہ علیہ خوشحال خان خٹک رحمۃ اللہ علیہ کو حکیم و طبیب ملتِ افغان قرار دیتے ہوئے یہ بھی واضح کرتے ہیں کہ بابا حق بات ببانگ دہل کہتے ہیں۔ سو وہ حق بات یہ بھی ہے کہ خوشحال خان کہتے ہیں کہ وہ افغان ہیں، جواب میں علامہ رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں کہ جی ہاں آپ افغان ہیں۔
اس حوالے سے مزید شاعری بھی علامہ اقبال رحمۃ اللہ علیہ کی موجود ہیں جو فغان اور افغان کے عنوان سے موجود ہے۔
خامسا : خوشحال خان خٹک رحمۃ اللہ علیہ کا قول جس میں وہ فرماتے ہیں کہ افغان ہی پشتون ہیں اور پشتون ہی افغان ہیں"۔یہ قول آگے بھی طوالت کے ساتھ آئے گا ۔ انشاء اللہ
ان اقوال کے علاوہ بھی بہت سارے دلائل ہیں جنھیں طوالت کے خوف سے ترک کررہاہوں ۔ لیکن اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی یاد رہے کہ لفظ "افغان " ہو یا لفظ "پشتون" ہو دونوں بحیثیت نام اس قوم کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے ۔
 

ناعمہ وقار

⭐⭐⭐⭐⭐⭐
Staff member
Charismatic
Champion
Writer
Popular
Mysterious
Joined
May 8, 2018
Local time
12:09 PM
Threads
111
Messages
3,146
Reaction score
4,604
Points
943
Location
The City of Containers
Gold Coins
859.92
Permanently Change Username Color & Style.
Get Unlimited Tags / Banners
Single Thread Highlight for 1 Week.
Thread Highlight Unlimited
Change Username Style.
:umda:
 
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks