خواب اور اس کی تعبیر

Author
A

Afzal339

★★☆☆☆
Dynamic Brigade
Expert
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Threads
149
Messages
469
Likes
669
Points
259
#1
بعض اوقات انسان نیند کی حالت میں ایسی جگہ کی سیر یا بہت سی ایسی چیزیں دیکھتا ہے جو وہ بیداری اورجاگنے کی حالت میں نہیں دیکھ سکتا۔ عرف عام میں اسی کیفیت کو خواب کہا جاتا ہے۔
خواب کو عربی زبان میں رؤیا کہاجاتا ہے
یہ دو طرح سے پڑھا جاتا ہے ایک ہمزہ کے ساتھ جیسے رؤیا اور ایک بغیر ہمزہ کے جیسے رویا
رؤیا اور رویت میں فرق
رؤیا اور رویت میں لفظی فرق تو رؤیا کے بعد الف کی جگہ تاء کا ہے لیکن اصطلاحی فرق یہ ہے کہ سوتے ہوئے دیکھنے والی کیفیت کو رؤیا اور جاگتے ہوئے دیکھنے والی کیفیت کو رویت کہاجاتاہے
رؤیا یعنی خواب اور اس کی تعبیر کے وجود اور اس کی حقیقت پر قرآن و سنت کے متعدد نصوص شاہد ہیں۔لہذا اس کی حقیقت کا ہی انکار کر دینا یا خوابوں کی بنیاد پر شرعی نصوص کا انکار کر دینا ہردونقطہ ہائے نگاہ افراط و تفریط کا شکار ہیں اور اسلامی نقطہ نگاہ سے کوسو ں دور ہیں۔
خلاصۃ التفاسیر میں ہے کہ خواب میں روح جسم سے نکل کر عالم علوی اور عالم سفلی میں (اکثر ایسے مقامات کی) سیرکرتی ہے جو وہ جاگنے میں نہیں دیکھ سکتی ہے اور وہ جو دیکھتی ہے اسے حس روحانی کہنا چاہیے، حس جسمانی صرف حاضر پر حاوی ہوسکتی ہے
اور حس روحانی حاضر وغائب دونوں کا ادراک و احساس کرتی ہے، اس لئے خواب میں ایسے احوال وکیفیات مشاہدے میں آ تی ہیں جن سے خود خواب دیکھنے والے کو بڑی حیرت ہوتی ہے، کبھی مسرت انگیز اورکبھی خوفناک تصویریں ذہن میں ابھرتی ہیں اور بیداری کے ساتھ ہی یہ تمام کہانی یکلخت مٹ جاتی ہے۔
اس بات میں کوئی شک نہیں کہ خواب یا تو اللہ کی طرف سے بشارت ہوتے ہیں یا پھر نفسانی خیالات اور شیطانی تصورات کا مجموعہ ہوتے ہیں۔ بہرحال وہ خواب جو نیک ہوتے ہیں اور عطیہ خداوندی ہوتے ہیں تو ان کے وجود اور اس کی حقیقت سے فرار نہیں اور وہی آج کے ہمارے اس مضمون کا موضوع بحث بھی ہیں۔ نیک خواب کے بارے میں ارشاد باری تعالی ہے
اَلَّذِیْنَ اٰمَنُوْا وَکَانُوْا یَتَّقُوْنo لَھُمُ الْبُشْرٰی فِی الْحَیٰوۃِ الدُّنْیَا وَفِی الْاٰخِرَۃِ۔(سورہ یونس: 63، 64
وہ) ایسے لوگ ہیں جو ایمان لائے اور ہمیشہ تقویٰ شعار رہے۔ ان کے لئے دنیا کی زندگی میں بھی عزت و مقبولیت کی بشارت ہے اور آخرت میں بھی مغفرت و شفاعت کی یا دنیا میں بھی نیک خوابوں کی صورت میں پاکیزہ روحانی مشاہدات ہیں اور آخرت میں بھی حُسنِ مطلق کے جلوے اور دیدار
اکثر مفسرین نے اپنی تفسیروں میں بشارت سے مراد وہ نیک خواب لیے ہیں جو اللہ تعالی کی طرف سے ایمان والوں کو عطا کیے جاتے ہیں
علامہ آلوسی رحمۃ اللہ علیہ نے اپنی تفسیر روح المعانی میں، امام ابن جریر رحمۃ اللہ علیہ نے اپنی تفسیر طبری میں، قاضی ثناء اللہ رحمۃ اللہ علیہ پانی پتی نے اپنی تفسیر مظہری میں، امام رازی رحمۃ اللہ علیہ نے اپنی تفسیر کبیر میں اورتقریبا دیگر تمام مفسرین نے بھی اپنی اپنی تفسیروں میں صراحت کے ساتھ یہ بات درج کی ہے کہ اس قرآنی آیت میں لفظ بشری سے مراد وہ نیک خواب ہیں جو ایمان والے دیکھتے ہیں۔
اسی طرح سورہ یوسف میں حضرت یوسف علیہ السلام کے بارے میں ارشاد ہوتا ہے
وَکَذٰلِکَ یَجْتَبِیْکَ رَبُّکَ وَیُعَلِّمُکَ مِنْ تَاْوِیْلِ الْاَحَادِیْثِ
سورہ یوسف

اسی طرح تمہارا رب تمہیں بزرگی کے لئے منتخب فرما لے گا اور تمہیں باتوں کے انجام تک پہنچنا یعنی خوابوں کی تعبیر کا علم سکھائے گا۔
اللہ تعالیٰ نے حضرت یوسف علیہ السلام کو ایک طرف جہاں بہت سے کمالات اور معجزات عطا فرمائے، وہیں پر انھیں میں خوابوں کی تعبیر کا علم اور فن بطور خاص عطا فرمایا۔ اور اس بات کا ذکر بطور خاص فرمایا۔ مثلاً بادشاہ مصر اور قیدیوں کے خواب حضرت یوسف علیہ السلام کے سامنے بیان ہوئے۔ آپ نے ان کی تعبیر بیان فرمائی اور اس تعبیر کے مطابق آئندہ واقعات رونما ہوئے۔
اس طرح قرآن مجید میں حضرت ابراہیم علیہ السلام کا خواب بھی مذکور ہے، جب انہوں نے اپنے بیٹے حضرت اسماعیل علیہ السلام سے فرمایا تھا
یٰبُنَیَّ اِنِّیْٓ اَرٰی فِی الْمَنَامِ اَنِّیْٓ اَذْبَحُکَ فَانْظُرْمَاذَا تَرٰی۔ قَالَ یٰٓاَبَتِ افْعَلْ مَا تُؤْمَرُ سَتَجِدُنِیْٓ اِنْ شَآءَ اللّٰہُ مِنَ الصّٰبِرِیْنَ فَلَمَّآ اَسْلَمَا وَتَلَّہٗ لِلْجَبِیْنِ
سورۃ الصافات

اے میرے لخت جگر، میں نے خواب میں دیکھا ہے کہ تجھے ذبح کررہا ہوں، پس بتا، تیری کیا رائے ہے؟ اسماعیل نے فرمایا، ابا جان، آپ کو جس بات کا حکم دیا گیا ہے، کر گزریئے، آپ یقیناً مجھے صابر و شاکر پائیں گے
پھر اس کے بعد قرآن مجید میں اس خواب کی تعبیر یوں مذکور ہے
فَلَمَّآ اَسْلَمَا وَتَلَّہٗ لِلْجَبِیْنِ وَنَادَیْنٰہُ اَنْ یّٰٓاِبْرٰھِیْمُ قَدْ صَدَّقْتَ الرُّءْ یَا۔ اِنَّا کَذٰلِکَ نَجْزِی الْمُحْسِنِیْنَ اِنَّ ھٰذَا لَھُوَ الْبَلٰٓؤُا الْمُبِیْنُ وَفَدَیْنٰہُ بِذِبْحٍ عَظِیْمٍ وَتَرَکْنَا عَلَیْہِ فِی الْاٰخِرِیْنَ(
سورۃ الصافات

پھر جب باپ بیٹا دونوں فرمانبرداری پر مستعد ہوئے او رباپ نے بیٹے کو پیشانی کے بل لٹا دیا، تو ہم نے اسے پکارا، اے ابراہیم، ہاتھ روک لیجئے آپ نے اپنا خواب سچا کر دکھایا، ہم نیکوں کو اسی طرح جزا دیا کرتے تھے۔ یقیناً یہ ایک بہت بڑی آزمائش تھی جس میں آپ پورے اترے او رہم نے اس کے بدلہ میں بڑی قربانی دی اور ہم نے اسے پچھلوں کے لیے آپ کا ورثہ اور ترکہ بنا دیا۔
اسی طرح آحادیث رسول ﷺ میں ہیں
الرُّؤْیَا الصِّالِحَۃُ جُزْءٌ مِنْ سِتَّۃٍ وَأَرْبَعِیْنَ جُزْءًا مِنَ النُّبُوَّۃِ
سچا خواب، نبوت کا چھیالیسواں حصہ ہے
صحیح بخاری کتاب التعبیر
ایک اور روایت ہے
لَمْ یَبْقَ مِنَ النُّبُوَّۃِ اِلا المُبَشِّرَاتْ
اب نبوت باقی نہیں رہی (ہاں اس کا فیض) مبشرات کی صورت میں باقی ہے۔
صحیح بخاری کتاب التعبیر
ایک مقام پر فرمان رسول ﷺ ہیں
إِنَّ الرِّسَالَۃَ وَالنُّبُوَّۃَ قَدْ انْقَطَعَتْ فَلَا رَسُولَ بَعْدِي وَلَا نَبِيَّ، قَالَ: فَشَقَّ ذَالِکَ عَلَی النَّاسِ فَقَالَ: لَکِن المُبَشِّرَاتُ
میرے بعد نبوت و رسالت کا سلسلہ منقطع ہو گیا ہے، اب کوئی رسول آ سکتا ہے نہ کوئی نبی،اور فرمایا یہ دشوار ہو گا لوگوں پر۔ فرمایا لیکن مبشرات ہوں گی
سنن ترمذی ابواب الرؤیاء
بخاری میں ذکر ہے صحابہ کرام رضی اللہ عنھم نے پوچھا یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم وہ مبشرات کیا ہیں؟ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا
الرُّؤْیَا الصَّالِحَۃُ
وہ نیک خواب جو اہل ایمان کو آتے ہیں۔
صحیح بخاری کتاب التعبیر
اور ان نیک خواب کے بارے میں فرمایا
الرُّؤْيَا الصَّالِحَۃُ مِنَ اللَّہِ
نیک خواب اللہ رب العزت کی طرف سے ہوتے ہیں۔
صحیح بخاری کتاب بدء الخلق
طوالت کے خوف سے میں یہاں پر ان چند دلائل پر ہی اکتفاء کروں گا وگرنہ قرآن و سنت میں ان کے علاوہ بھی بہت سارے دلائل موجود ہیں جو خوابوں کے وجود اور ان کی صداقت بیان کرتے ہیں اور ان سے یہ بات بھی ثابت ہوتی ہے کہ خواب کے وجود کا انکار وہم کے سوا کچھ نہیں۔
 

Doctor

★★★★★
Most Valuable
Most Popular
Top Poster
Dynamic Brigade
Developer
Expert
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Threads
324
Messages
2,496
Likes
3,054
Points
832
Location
Rawalpindi
#2
سبحان اللہ، بہترین تحریر ہے، جزاک اللہ خیرا کثیرا
 
Author
A

Afzal339

★★☆☆☆
Dynamic Brigade
Expert
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Threads
149
Messages
469
Likes
669
Points
259
#3
سبحان اللہ، بہترین تحریر ہے، جزاک اللہ خیرا کثیرا
شکریہ ڈاکٹر صاحب
 

UrduLover

★★★★★
Dynamic Brigade
ITD Express
Designer
Writer
Top Poster Of Month
Joined
May 9, 2018
Threads
479
Messages
2,244
Likes
1,614
Points
704
Location
Manchester U.K
#4

Akram Naaz

☆☆☆☆☆
Joined
May 9, 2018
Threads
5
Messages
58
Likes
47
Points
18
Location
Mianwali
#5
جزاک اللہ
بہت عمدہ
 

Sabih Tariq

★★★☆☆
Dynamic Brigade
Writer
Joined
May 5, 2018
Threads
32
Messages
1,139
Likes
1,705
Points
417
Location
Central
#6
ماشاء اللہ عمدہ تھریڈ ہے،مفید معلومات ہوئیں۔
جزاک اللہ خیرا
 
Show only guests
Top