شاعر:افتخار راغبؔدشتِ جُنوں میں دوڑتا پھرتا ہے اک غزال

PakArt UrduLover

Thread Starter
in memoriam 1961-2020، May his soul rest in peace
Charismatic
Designer
Expert
Writer
Popular
ITD Observer
ITD Solo Person
ITD Fan Fictionest
ITD Well Wishir
ITD Intrinsic Person
Persistent Person
ITD Supporter
Top Threads Starter
Joined
May 9, 2018
Local time
1:10 PM
Threads
1,354
Messages
7,659
Reaction score
6,964
Points
1,508
Location
Manchester U.K
Gold Coins
115.03
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Get Unlimited Tags / Banners
Thread Highlight Unlimited
Thread Highlight Unlimited



Please, Log in or Register to view URLs content!

افتخار راغبؔ
دشتِ جُنوں میں دوڑتا پھرتا ہے اک غزال

مشکل ہے ذہن و دل کے عناصر میں اعتدال



تجھ سا حسیں جہانِ تخیّل میں بھی کہاں

ممکن کہاں ہے ڈھونڈ کے لانا تری مثال



مضبوط اِس قدر ہو ہر اک آس کی لڑی

ڈر ٹوٹنے کا ہو نہ بکھرنے کا احتمال



مت پوچھ کیسے شعروں میں آتی ہے دل کشی

مت پوچھ کس کی چشمِ فسوں گر کا ہے کمال



جس کا جواب قلب گوارا نہ کر سکے

اُبھرے کبھی نہ ذہن میں ایسا کوئی سوال



اک دوسرے کے دل میں دھڑکتے رہیں سدا

تا عمر اعتماد کی سانسیں رہیں بحال



ہو جائے ہر ملال دسمبر کے ساتھ ختم

لے آئے جنوری کوئی مطلق خوشی کا سال



تعبیر اُس کے حسن و ادا کی ہو کیا بھلا

وہ پیکرِ جمال وہ دل دارِ خوش خصال



دیکھا ہر ایک عکس میں آنکھوں نے تیرا عکس

"ابھرا ہر اک خیال کی تہہ سے ترا خیال”



راغبؔ سمجھ کے شعر وہ دیتے رہیں گے داد

کیسے بیاں کروں دلِ مضطر کا اپنے حال
 
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks