بات

  1. Lovely Eyes

    عنبرین حسیب عنبر : ہو گئی بات پرانی پھر بھی

    عنبرین حسیب عنبر : ہو گئی بات پرانی پھر بھی یاد ہے مجھ کو زبانی پھر بھی موجۂ غم نے تو دم توڑ دیا رہ گیا آنکھ میں پانی پھر بھی میں نے سوچا بھی نہیں تھا اس کو ہو گئی شام سہانی پھر بھی چشم نم نے اسے جاتے دیکھا دل نے یہ بات نہ مانی پھر بھی لوگ ارزاں ہوئے جاتے ہیں یہاں بڑھتی جاتی ہے...
Top