اسیری

  1. Lovely Eyes

    عنبرین حسیب عنبر : اب اسیری کی یہ تدبیر ہوئی جاتی ہے

    عنبرین حسیب عنبر : اب اسیری کی یہ تدبیر ہوئی جاتی ہے ایک خوشبو مری زنجیر ہوئی جاتی ہے اک حسیں خواب کہ آنکھوں سے نکلتا ہی نہیں ایک وحشت ہے کہ تعبیر ہوئی جاتی ہے اس کی پوشاک نگاہوں کا عجب ہے یہ فسوں خوش بیانی مری تصویر ہوئی جاتی ہے اب وہ دیدار میسر ہے نہ قربت نہ سخن اک جدائی ہے جو...
Top
AdBlock Detected

We get it, advertisements are annoying!

Sure, ad-blocking software does a great job at blocking ads, but it also blocks useful features of our website. For the best site experience please disable your AdBlocker.

I've Disabled AdBlock    No Thanks