ITD Ramazan Quiz 1439 Question 25

Status
Not open for further replies.
Author
Doctor

Doctor

Team Leader
Most Valuable
Most Popular
Top Poster
Top Poster of a Month
Dynamic Brigade
Developer
Expert
Teacher
Writer
ITD4MRTS
ITD5MMB
Joined
Apr 25, 2018
Threads
300
Messages
2,099
Likes
2,615
Points
920
Location
Rawalpindi
#1
سوال نمبر25
قومِ لوط، جسے عذاب سے تباہ و برباد کیا گیا اُس قوم کی تباہ حال بستی اور باقیات موجودہ وقت میں کس مقام پر ہیں؟
 

ناعمہ وقار

Staff member
Moderator
Contest Winner
Dynamic Brigade
Joined
May 8, 2018
Threads
11
Messages
696
Likes
833
Points
310
Location
Islamabad
#2
اردن میں “تل الحمام” کے مقام پر
 

Ahsan376

Senior Member
Joined
May 6, 2018
Threads
6
Messages
186
Likes
171
Points
69
Location
Lahore
#3
قوم لوط کے تباہ شہر"سدوم" کے کھنڈرات اردن میں "تل الحمام" کے مقام پر پائے گئے ہیں۔​
 

Lovely Eyes

Senior Member
Joined
Apr 28, 2018
Threads
40
Messages
152
Likes
175
Points
44
#4
اس قوم کو الٹ دیا گیا تھا اس کی باقیات زمین پر نہیں بلکہ زیر زمین بحیرہ مردار کے نیچے موجود ہیں​
 

X 2

Super Star
Dynamic Brigade
Expert
Writer
Joined
Apr 25, 2018
Threads
98
Messages
640
Likes
1,674
Points
477
#5
بحیرہ مردار کے نیچے​
 
Author
Doctor

Doctor

Team Leader
Most Valuable
Most Popular
Top Poster
Top Poster of a Month
Dynamic Brigade
Developer
Expert
Teacher
Writer
ITD4MRTS
ITD5MMB
Joined
Apr 25, 2018
Threads
300
Messages
2,099
Likes
2,615
Points
920
Location
Rawalpindi
#6
سوال نمبر25
قومِ لوط، جسے عذاب سے تباہ و برباد کیا گیا اُس قوم کی تباہ حال بستی اور باقیات موجودہ وقت میں کس مقام پر ہیں؟
درست جواب
بحیرۂ مردار کے نیچے
کچھ اراکین کا جواب اردن کا علاقہ تل الحمام ہے
یہ دونوں مقام طونکہ ساتھ ساتھ ہی واقع ہیں اس لئے ان دونوں جوابات کا درست تسلیم کیا گیا ہے
اس حوالے سے کچھ تفصیل
’’قوم لوط نے (ان کی) تنبیہ کو جھٹلایا ۔ ہم نے پتھراؤ کرنے والی ہوا ان پر بھیج دی (جس نے انہیں تباہ کردیا)، صرف لوطؑ کے گھر والے اس سے محفوظ رہے، جنہیں ہم نے اپنے فضل سے صبح ہونے سے قبل (وہاں سے ) بچا کر نکال لیا۔ ہم ہر اس شخص کو جز ا دیتے ہیں، جو شکر گزار ہوتاہے۔ اور لوطؑ نے اپنی قوم کے لوگوں کو ہماری (جانب سے بھیجی گئی) سزا سے خبردار کیا لیکن وہ ساری تنبیہات پر شک کرتے اور انہیں نظر انداز کرتے رہے۔‘‘
(سورۃ القمر۔آیات 33 تا 36 )
حضرت لوط ؑ کا زمانہ عین وہی ہے جوحضرت ابراہیم ؑ کا تھا۔ حضرت لوطؑ کو حضرت ابراہیم کے ایک نواحی علاقے میں پیغمبر بناکر بھیجا گیا تھا۔ یہ لوگ ، جیسا کہ قرآن ہمیں بتاتا ہے، بدفعلی کی عادتِ بد میں مبتلا تھے جو اس وقت تک کی دنیا میں ایک نامعلوم عمل شمار ہوتی تھی۔ جب حضرت لوط ؑ نے ان لوگوں کو بدفعلی سے روکا اور انہیں اﷲ تعالی کی جانب سے تنبیہ پہنچائی ، تو انہوں نے حضرت لوطؑ کو پیغمبر ماننے اور کوئی بھی نصیحت قبول کرنے سے انکار کردیا، اور غیر فطری فعل سے شغل جاری رکھا۔ آخر کار اﷲ تعالی نے ان لوگوں پر عذاب نازل کیا اور وہ لوگ ایک عبرت انگیز حادثے کی بناء پر روئے زمین سے نیست ونابود ہوگئے۔ وہ شہر جو قوم لوط ؑ کا مسکن کا تھا، اسے عہد نامۂ عتیق میں’’سدوم‘‘ یعنی گناہ گاروں (بدفعلیاں کرنے والوں ) کا شہر لکھا گیا ہے۔ یہ بستی جو بحیرۂ احمر کے شمال میں واقع تھی، یقیناً اسی انداز میں تباہ ہوئی ، جیسا کہ قرآن میں بتایا گیا ہے (اور یہی ہمارا ایمان بھی ہے اور ہونا چاہئے)۔ آثاری (آثار قدیمہ کے) مطالعات سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ شہر اس جگہ واقع تھا جہاں آج بحیرۂ مردار نامی جھیل (اردن اسرائیل سرحد پر) واقع ہے۔
========
سب سے پہلے درست جواب دینے والے رکن
ناعمہ وقار
دیگر درست جواب دینے والے اراکین
Ahsan376
Lovely Eyes
X 2
سب سے پہلے جواب دینے کے 6پوائنٹ حاصل کرنے والی رکن
ناعمہ وقار
قرعہ اندازی کے ذریعے چار بونس پوائنٹس حاصل کرنے والے اراکین
Ahsan376
Lovely Eyes
آپ تمام احباب کا بے حد شکریہ
اللہ پاک آپ کو دین و دنیا کے علوم میں مہارت نصیب فرمائے
آمین
 
Status
Not open for further replies.
Top